83

قومی ٹیم ٹیسٹ سیریز جیتنے میں کامیاب

قومی ٹیم13سال بعد ہوم گراؤنڈ پر ٹیسٹ سیریز جیتنے میں کامیاب،سری لنکا کو کراچی ٹیسٹ میں263رنز سے شکست دیدی۔نیشنل سٹیڈیم، کراچی میں کھیلی جارہی سیریز کے دوسرے اور آخری ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن پاکستانی ٹیم نے 385 رنز دو کھلاڑی آؤٹ سے اپنی دوسری نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی کپتان اظہر علی 57 اور بابر اعظم 22 رنز بنا کر کریز پر موجود تھے۔ اظہر علی ایک عرصے بعد بھرپور فارم میں نظر آئے اور بیٹنگ کےلئے سازگار وکٹ پر سنبھل کر بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی سنچری مکمل کی۔قومی ٹیم کے کپتان 118 رنز بنا کر لاستھ ایمبل ڈینیا کی گیند پر آؤٹ ہوگئے۔اظہر علی کے آؤٹ ہونے کے بعد دوسرے اینڈ پر موجود بابر اعظم نے محمد رضوان کے ساتھ سکور کو آگے بڑھاتے ہوئے سری لنکا کے خلاف دوسری اننگز میں سنچری سکور کی اور دوسری اننگز میں سنچری بنانےوالے چوتھے کھلاڑی تھے۔ پاکستان نے کھانے کے وقفے پر 555 رنز 3کھلاڑی آؤٹ ہر اپنی دوسری نامکمل اننگز ڈکلیئر کی تو بابر اعظم سنچری جبکہ محمد رضوان 21 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔ایک بڑے ہدف کے تعاقب میں اوپنرز دمتھ کرونارتنے اور اوشادا فرنینڈو نے دوسری اننگز میں اپنی ٹیم کو 39رنز کا آغاز فراہم کیا لیکن اس مرحلے پر محمد عباس کی گیند پر سری لنکن کپتان کی اننگز اختتام کو پہنچی۔ ابھی سری لنکن ٹیم اس نقصان سے سنبھلی بھی نہ تھی کہ اگلے اوور میں نسیم شاہ نے کوشل مینڈس کو کھاتا کھولنے کا بھی موقع نہ دیا اور بابر اعظم کی مدد سے چلتا کردیا۔اس مرحلے پر اوشادا فرنینڈو کا ساتھ دینے تجربہ کار اینجلو میتھیوز آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے سکور کو 70تک پہنچا دیا، اس سے قبل کہ یہ شراکت مزید طویل ہوتی، شاہین شاہ آفریدی نے پہلی اننگز کی طرح دوسری اننگز میں بھی محمد رضوان کی مدد سے میتھیوز کو پویلین واپسی پر مجبور کردیا،پاکستان کو چوتھی کامیابی کےلئے زیادہ انتظار نہیں کرنا پڑا اور دنیش چندیمل بھی خاطر خواہ کارکردگی دکھائے بغیر پویلین لوٹ گئے جبکہ ایک اوور بعد یاسر شاہ نے میچ میں پہلی وکٹ حاصل کرتے ہوئے دھننجیا ڈی سلوا کی وکٹیں بکھیر دیں،ڈکویلا اور فر نینڈو نے چھٹی وکٹ کے لیے104رنز جوڑے اور اس دوران ڈکویلا نے اپنی نصف سنچری مکمل کی جسکے بعدوہ 65رنز بنا حارث سہیل کی گیند پر ریورس سویپ کھیلتے ہوئے بولڈ ہوگئے،فرنینڈو نے اپنی پہلی ٹیسٹ سنچری مکمل کی تاہم دن کے آخری اوورمیں پریرا کو نسیم شاہ نے اپنا تیسرا بنا لیا ۔ یاد رہے کہ میچ کے تیسرے دن عابد علی اور شان مسعود کی سنچریوں کی بدولت پاکستان نے دوسری اننگز میں 2 وکٹوں پر 395 رنز بنا کر 305 رنز کی برتری حاصل کرلی تھی۔شان مسعود 135 رنز بناکر کمارا کی گیند پر کیچ آئٹ ہوگئے، انہوں نے اپنے کیریئر کی دوسری سنچری بنائی جبکہ دوسرے اینڈ سے اوپنر عابد علی نے بھی مسلسل دوسرے ٹیسٹ میں دوسری سنچری مکمل کرکے ایک اور ریکارڈ اپنے نام کیا تھا۔ پاکستانی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 191 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی جس کے جواب میں سری لنکا نے پہلی اننگز میں 271رنز بنا کر 80رنز کی برتری حاصل کی۔واضح رہے کہ پاکستان نے دوسرے ٹیسٹ کےلئے ٹیم میں ایک تبدیلی کی اور عثمان شنواری کی جگہ یاسر شاہ کو شامل کیا گیا ۔دونوں ٹیموں کے درمیان راولپنڈی میں کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ میچ کے ذریعے ملک میں 10سال کے طویل عرصے کے بعد ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی ہوئی تھی تاہم 3 سے 4 روز بارش کی آنکھ مچولی کے باعث میچ ڈرا ہو گیا تھا البتہ عابد علی نے ڈیبیو ٹیسٹ میچ میں سنچری بنا کر اپنی بہترین فارم کا ثبوت دیا تھا۔قومی ٹیم یہ ٹیسٹ میچ جیت کر 10 سال بعد ملک میں ہونےوالی ٹیسٹ سیریز کو یادگار بنا سکتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں